کوسوں دور کنارا ہوگا

مظہر امام

کوسوں دور کنارا ہوگا

مظہر امام

MORE BYمظہر امام

    کوسوں دور کنارا ہوگا

    کشتی ہوگی دریا ہوگا

    پاس تمہیں ہو تم ہی بتاؤ

    کوئی مجھ سا تنہا ہوگا

    آؤ اور قریب آ جاؤ

    وقت بھی رستہ تکتا ہوگا

    تم سے حسیں تو اور بھی ہوں گے

    لیکن کوئی تم سا ہوگا

    اب تو کچھ بھی یاد نہیں ہے

    ہم نے تم کو چاہا ہوگا

    ہم نے گریباں چاک کیا تھا

    ہم کو ہی خود سینا ہوگا

    جب ہم تیرا نام نہ لیں گے

    وہ بھی ایک زمانا ہوگا

    وہ بھی ایک حقیقت ہوگی

    جس کا نام فسانہ ہوگا

    کل کی فکر کہاں تک کیجے

    اور برا اب کتنا ہوگا

    ہاں وہ امامؔ اک رسوا شاعر

    تم نے اس کو دیکھا ہوگا

    مآخذ
    • کتاب : paalkii kahkashaa.n (Pg. 179)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY