کچھ بات نہیں جسم اگر میرا جلا ہے

فخر زمان

کچھ بات نہیں جسم اگر میرا جلا ہے

فخر زمان

MORE BYفخر زمان

    کچھ بات نہیں جسم اگر میرا جلا ہے

    صد شکر کہ اس بزم سے شعلہ تو اٹھا ہے

    مانا کہ مرے لان کی پھر سبز ہوئی گھاس

    اس مینہ میں پڑوسی کا مکاں بھی تو گرا ہے

    سردی ہے کہ اس جسم سے پھر بھی نہیں جاتی

    سورج ہے کہ مدت سے مرے سر پر کھڑا ہے

    ہر سمت خموشی ہے مگر کہتے ہیں کچھ لوگ

    اس شہر میں اک شور قیامت کا بپا ہے

    دیوار سے گو اینٹ کھسک کر پڑی سر پر

    صد شکر کہ روزن کوئی زنداں میں کھلا ہے

    اب دیکھیے کس راہ میں دیوار بنے گا

    ڈھلوان پہ اک سنگ گراں چل تو پڑا ہے

    اس سال مرے کھیت میں اولے بھی پڑے ہیں

    اس سال مری فصل کو کیڑا بھی لگا ہے

    آنکھیں مری روشن رہیں خوش حال رہوں میں

    اک اندھی بھکارن کی مرے حق میں دعا ہے

    میں بھوک سے بے حال ہوں تو سیر شکم ہے

    کیا میرا خدا وہ نہیں جو تیرا خدا ہے

    مآخذ:

    • کتاب : Pakistani Adab (Pg. 631)
    • Author : Dr. Rashid Amjad
    • مطبع : Pakistan Academy of Letters, Islambad, Pakistan (2009)
    • اشاعت : 2009

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY