کچھ دن تو ملال اس کا حق تھا

کشور ناہید

کچھ دن تو ملال اس کا حق تھا

کشور ناہید

MORE BYکشور ناہید

    کچھ دن تو ملال اس کا حق تھا

    بچھڑا تو خیال اس کا حق تھا

    وہ رات بھی دن سی تازہ رکھتا

    شبنم کا جمال اس کا حق تھا

    وہ طرز بیاں میں چاندنی تھا

    تاروں سے وصال اس کا حق تھا

    تھا اس کا خرام موج دریا

    لہروں کا جلال اس کا حق تھا

    بارش کا بدن تھا اس کا ہنسنا

    غنچے کا خصال اس کا حق تھا

    رکھتا تھا سنبھال شیشہ جاں

    تجسیم کمال اس کا حق تھا

    بادل کی مثال اس کی خو تھی

    تعبیر ہلال اس کا حق تھا

    اجلا تھا چنبیلیوں کے جیسا

    یوسف سا جمال اس کا حق تھا

    RECITATIONS

    کشور ناہید

    کشور ناہید

    کشور ناہید

    کچھ دن تو ملال اس کا حق تھا کشور ناہید

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY