کیا کشش حسن بے پناہ میں ہے

جگر مراد آبادی

کیا کشش حسن بے پناہ میں ہے

جگر مراد آبادی

MORE BY جگر مراد آبادی

    کیا کشش حسن بے پناہ میں ہے

    جو قدم ہے اسی کی راہ میں ہے

    مے کدہ میں نہ خانقاہ میں ہے

    جو تجلی دل تباہ میں ہے

    ہائے وہ راز غم کہ جو اب تک

    تیرے دل میں مری نگاہ میں ہے

    عشق میں کیسی منزل مقصود

    وہ بھی اک گرد ہے جو راہ میں ہے

    میں جہاں ہوں ترے خیال میں ہوں

    تو جہاں ہے مری نگاہ میں ہے

    حسن کو بھی کہاں نصیب جگرؔ

    وہ جو اک شے مری نگاہ میں ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites