کیوں میں اب قابل جفا نہ رہا

بیخود بدایونی

کیوں میں اب قابل جفا نہ رہا

بیخود بدایونی

MORE BY بیخود بدایونی

    کیوں میں اب قابل جفا نہ رہا

    کیا ہوا کہیے مجھ میں کیا نہ رہا

    ان کی محفل میں اس کے چرچے ہیں

    مجھ سے اچھا مرا فسانہ رہا

    واعظ و محتسب کا جمگھٹ ہے

    میکدہ اب تو میکدہ نہ رہا

    اف رے نا آشنائیاں اس کی

    چار دن بھی تو آشنا نہ رہا

    لاکھ پردے میں کوئی کیوں نہ چھپے

    راز الفت تو اب چھپا نہ رہا

    اتنی مایوسیاں بھی کیا بیخودؔ

    کیا خدا کا بھی آسرا نہ رہا

    مآخذ:

    • کتاب : Intekhab-e-Sukhan(Jild-2) (Pg. 182)
    • Author : Hasrat Mohani
    • مطبع : uttar pradesh urdu academy (1983)
    • اشاعت : 1983

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY