میں منحرف تھا جس سے حرف انحراف کی طرح

مصور سبزواری

میں منحرف تھا جس سے حرف انحراف کی طرح

مصور سبزواری

MORE BY مصور سبزواری

    میں منحرف تھا جس سے حرف انحراف کی طرح

    کھلا وہ دھیرے دھیرے بوئے انکشاف کی طرح

    یہ بے ثمر زمیں یہ رائیگاں فلک کے سلسلے

    ہیں میرے گرد کیوں حصار اعتکاف کی طرح

    وہ سردیوں کی دھوپ کی طرح غروب ہو گیا

    لپٹ رہی ہے یاد جسم سے لحاف کی طرح

    یہ لگ رہا ہے سب دعائیں مستجاب ہو گئیں

    جگہ جگہ ہے گہرا آسماں شگاف کی طرح

    صف منافقاں میں پھر وہ جا ملا تو کیا عجب

    ہوئی تھی صلح بھی خموش اختلاف کی طرح

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    میں منحرف تھا جس سے حرف انحراف کی طرح نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY