منزل کی دھوم دھام سے جب جی اچٹ گیا

کالی داس گپتا رضا

منزل کی دھوم دھام سے جب جی اچٹ گیا

کالی داس گپتا رضا

MORE BY کالی داس گپتا رضا

    منزل کی دھوم دھام سے جب جی اچٹ گیا

    رہگیر جیسے سینکڑوں رستوں میں بٹ گیا

    افسوس دل تک آنے کی راہیں نہ کھل سکیں

    کوئی فقط خیال تک آ کر پلٹ گیا

    ہم تول بیٹھے صبح دم انساں کو سائے سے

    سورج کے سر پہ آتے ہی سایا سمٹ گیا

    کیا جانے کس چٹان سے ٹکرا گیا ہے دل

    چلتا ہوا سفینہ اچانک الٹ گیا

    اب کوئی ڈھونڈ ڈھانڈ کے لاؤ نیا وجود

    انسان تو بلندی انساں سے گھٹ گیا

    منزل پہ گرد وہم و گماں تھی وہ دھل گئی

    رستے میں عقل و ہوش کا پتھر تھا ہٹ گیا

    محفل بھی نور بار ہے ساقی بھی خم بدوش

    میرے ہی ناؤ نوش کا معیار گھٹ گیا

    منزل کہیں ملی نہ ملی لیکن اے رضاؔ

    منزل کے اشتیاق میں رستا تو کٹ گیا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    منزل کی دھوم دھام سے جب جی اچٹ گیا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY