منزلیں بھی یہ شکستہ بال و پر بھی دیکھنا

عطاء الحق قاسمی

منزلیں بھی یہ شکستہ بال و پر بھی دیکھنا

عطاء الحق قاسمی

MORE BYعطاء الحق قاسمی

    منزلیں بھی یہ شکستہ بال و پر بھی دیکھنا

    تم سفر بھی دیکھنا رخت سفر بھی دیکھنا

    حال دل تو کھل چکا اس شہر میں ہر شخص پر

    ہاں مگر اس شہر میں اک بے خبر بھی دیکھنا

    راستہ دیں یہ سلگتی بستیاں تو ایک دن

    قریۂ جاں میں اترنا یہ نگر بھی دیکھنا

    چند لمحوں کی شناسائی مگر اب عمر بھر

    تم شرر بھی دیکھنا رقص شرر بھی دیکھنا

    جس کی خاطر میں بھلا بیٹھا تھا اپنے آپ کو

    اب اسی کے بھول جانے کا ہنر بھی دیکھنا

    یہ تو آداب محبت کے منافی ہے عطاؔ

    روزن دیوار سے بیرون در بھی دیکھنا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY