مسرتوں کو یہ اہل ہوس نہ کھو دیتے

مجروح سلطانپوری

مسرتوں کو یہ اہل ہوس نہ کھو دیتے

مجروح سلطانپوری

MORE BYمجروح سلطانپوری

    مسرتوں کو یہ اہل ہوس نہ کھو دیتے

    جو ہر خوشی میں ترے غم کو بھی سمو دیتے

    کہاں وہ شب کہ ترے گیسوؤں کے سائے میں

    خیال صبح سے ہم آستیں بھگو دیتے

    بہانے اور بھی ہوتے جو زندگی کے لیے

    ہم ایک بار تری آرزو بھی کھو دیتے

    بچا لیا مجھے طوفاں کی موج نے ورنہ

    کنارے والے سفینہ مرا ڈبو دیتے

    جو دیکھتے مری نظروں پہ بندشوں کے ستم

    تو یہ نظارے مری بے بسی پہ رو دیتے

    کبھی تو یوں بھی امنڈتے سرشک غم مجروحؔ

    کہ میرے زخم تمنا کے داغ دھو دیتے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    مسرتوں کو یہ اہل ہوس نہ کھو دیتے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY