گھر کی دہلیز سے بازار میں مت آ جانا

اعتبار ساجد

گھر کی دہلیز سے بازار میں مت آ جانا

اعتبار ساجد

MORE BYاعتبار ساجد

    گھر کی دہلیز سے بازار میں مت آ جانا

    تم کسی چشم خریدار میں مت آ جانا

    خاک اڑانا انہیں گلیوں میں بھلا لگتا ہے

    چلتے پھرتے کسی دربار میں مت آ جانا

    یوں ہی خوشبو کی طرح پھیلتے رہنا ہر سو

    تم کسی دام طلب گار میں مت آ جانا

    دور ساحل پہ کھڑے رہ کے تماشا کرنا

    کسی امید کے منجدھار میں مت آ جانا

    اچھے لگتے ہو کہ خود سر نہیں خوددار ہو تم

    ہاں سمٹ کے بت پندار میں مت آ جانا

    چاند کہتا ہوں تو مطلب نہ غلط لینا تم

    رات کو روزن دیوار میں مت آ جانا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    نامعلوم

    نامعلوم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY