ہوائیں جب گھنٹیاں بجائیں تو لوٹ آنا

عشرت آفریں

ہوائیں جب گھنٹیاں بجائیں تو لوٹ آنا

عشرت آفریں

MORE BYعشرت آفریں

    ہوائیں جب گھنٹیاں بجائیں تو لوٹ آنا

    کسی کی آنکھیں دئے جلائیں تو لوٹ آنا

    بہت دنوں تک یہ موسم گل نہیں رہے گا

    جو شاخ جاں پر گلاب آئیں تو لوٹ آنا

    ہوا درختوں سے جب گلے مل کے رو رہی ہو

    پرند لمبے سفر پہ جائیں تو لوٹ آنا

    جو ضد پہ آ جائے دل تو اس کی بھی مان لینا

    پرانی یادیں بہت ستائیں تو لوٹ آنا

    فراق کی آگ چاٹ جاتی ہے جسم و جاں کو

    جو سن سکو وقت کی صدائیں تو لوٹ آنا

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY