منہ فقیروں سے نہ پھیرا چاہئے

کلیم عاجز

منہ فقیروں سے نہ پھیرا چاہئے

کلیم عاجز

MORE BYکلیم عاجز

    منہ فقیروں سے نہ پھیرا چاہئے

    یہ تو پوچھا چاہئے کیا چاہئے

    چاہ کا معیار اونچا چاہئے

    جو نہ چاہیں ان کو چاہا چاہئے

    کون چاہے ہے کسی کو بے غرض

    چاہنے والوں سے بھاگا چاہئے

    ہم تو کچھ چاہے ہیں تم چاہو ہو کچھ

    وقت کیا چاہے ہے دیکھا چاہئے

    چاہتے ہیں تیرے ہی دامن کی خیر

    ہم ہیں دیوانے ہمیں کیا چاہئے

    بے رخی بھی ناز بھی انداز بھی

    چاہئے لیکن نہ اتنا چاہئے

    ہم جو کہنا چاہتے ہیں کیا کہیں

    آپ کہہ لیجے جو کہنا چاہئے

    بات چاہے بے سلیقہ ہو کلیمؔ

    بات کہنے کا سلیقہ چاہئے

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY