مستی میں فروغ رخ جاناں نہیں دیکھا

اصغر گونڈوی

مستی میں فروغ رخ جاناں نہیں دیکھا

اصغر گونڈوی

MORE BY اصغر گونڈوی

    مستی میں فروغ رخ جاناں نہیں دیکھا

    سنتے ہیں بہار آئی گلستاں نہیں دیکھا

    زاہد نے مرا حاصل ایماں نہیں دیکھا

    رخ پر تری زلفوں کو پریشاں نہیں دیکھا

    آئے تھے سبھی طرح کے جلوے مرے آگے

    میں نے مگر اے دیدۂ حیراں نہیں دیکھا

    اس طرح زمانہ کبھی ہوتا نہ پر آشوب

    فتنوں نے ترا گوشۂ داماں نہیں دیکھا

    ہر حال میں بس پیش نظر ہے وہی صورت

    میں نے کبھی روئے شب ہجراں نہیں دیکھا

    کچھ دعوئ تمکیں میں ہے معذور بھی زاہد

    مستی میں تجھے چاک گریباں نہیں دیکھا

    روداد چمن سنتا ہوں اس طرح قفس میں

    جیسے کبھی آنکھوں سے گلستاں نہیں دیکھا

    مجھ خستہ و مہجور کی آنکھیں ہیں ترستی

    کب سے تجھے اے سرو خراماں نہیں دیکھا

    کیا کیا ہوا ہنگام جنون یہ نہیں معلوم

    کچھ ہوش جو آیا تو گریباں نہیں دیکھا

    شائستۂ صحبت کوئی ان میں نہیں اصغرؔ

    کافر نہیں دیکھے کہ مسلماں نہیں دیکھا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    عابدہ پروین

    عابدہ پروین

    دویشی سہگل

    دویشی سہگل

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    مستی میں فروغ رخ جاناں نہیں دیکھا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY