متاع بے بہا ہے درد و سوز آرزو مندی

علامہ اقبال

متاع بے بہا ہے درد و سوز آرزو مندی

علامہ اقبال

MORE BYعلامہ اقبال

    متاع بے بہا ہے درد و سوز آرزو مندی

    مقام بندگی دے کر نہ لوں شان خداوندی

    ترے آزاد بندوں کی نہ یہ دنیا نہ وہ دنیا

    یہاں مرنے کی پابندی وہاں جینے کی پابندی

    حجاب اکسیر ہے آوارۂ کوئے محبت کو

    مری آتش کو بھڑکاتی ہے تیری دیر پیوندی

    گزر اوقات کر لیتا ہے یہ کوہ و بیاباں میں

    کہ شاہیں کے لیے ذلت ہے کار آشیاں بندی

    یہ فیضان نظر تھا یا کہ مکتب کی کرامت تھی

    سکھائے کس نے اسماعیل کو آداب فرزندی

    زیارت گاہ اہل عزم و ہمت ہے لحد میری

    کہ خاک راہ کو میں نے بتایا راز الوندی

    مری مشاطگی کی کیا ضرورت حسن معنی کو

    کہ فطرت خود بہ خود کرتی ہے لالے کی حنا بندی

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    نامعلوم

    نامعلوم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY