میری اک چھوٹی سی کوشش تجھ کو پانے کے لیے

ظفر گورکھپوری

میری اک چھوٹی سی کوشش تجھ کو پانے کے لیے

ظفر گورکھپوری

MORE BY ظفر گورکھپوری

    میری اک چھوٹی سی کوشش تجھ کو پانے کے لیے

    بن گئی ہے مسئلہ سارے زمانے کے لیے

    ریت میری عمر میں بچہ نرالے میرے کھیل

    میں نے دیواریں اٹھائی ہیں گرانے کے لیے

    وقت ہونٹوں سے مرے وہ بھی کھرچ کر لے گیا

    اک تبسم جو تھا دنیا کو دکھانے کے لیے

    آسماں ایسا بھی کیا خطرہ تھا دل کی آگ سے

    اتنی بارش ایک شعلے کو بجھانے کے لیے

    چھت ٹپکتی تھی اگرچہ پھر بھی آ جاتی تھی نیند

    میں نئے گھر میں بہت رویا پرانے کے لیے

    دیر تک ہنستا رہا ان پر ہمارا بچپنا

    تجربے آئے تھے سنجیدہ بنانے کے لیے

    میں ظفرؔ تا زندگی بکتا رہا پردیس میں

    اپنی گھر والی کو اک کنگن دلانے کے لیے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    ظفر گورکھپوری

    ظفر گورکھپوری

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY