ملنے کی جب بات ہوئی تھی

کرامت بخاری

ملنے کی جب بات ہوئی تھی

کرامت بخاری

MORE BY کرامت بخاری

    ملنے کی جب بات ہوئی تھی

    تنہائی بھی پاس کھڑی تھی

    آنکھوں میں طوفان آیا تھا

    دل کی بستی ڈوب گئی تھی

    میں کہ تیرے دھیان میں گم تھا

    دنیا مجھ کو ڈھونڈھ رہی تھی

    ہم دونوں خاموش کھڑے تھے

    ساون کی پر زور جھڑی تھی

    کوسوں دور مجھے جانا تھا

    پاؤں میں زنجیر پڑی تھی

    تم سے جدائی کا کیا رونا

    یہ تو قسمت میں لکھی تھی

    خوابوں کے اک شہزادے سے

    نیند کی دیوی روٹھ گئی تھی

    ساری عمر سلگتے گزری

    میں تھا یا گیلی لکڑی تھی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY