ملتا ہے ہر چراغ کو سایا زمین پر

ہمدم کاشمیری

ملتا ہے ہر چراغ کو سایا زمین پر

ہمدم کاشمیری

MORE BYہمدم کاشمیری

    ملتا ہے ہر چراغ کو سایا زمین پر

    رہتا نہیں ہے کوئی اکیلا زمین پر

    ہر ایک نقش اس کا ہوا لے کے اڑ گئی

    کھینچا تھا ہم نے شوق کا نقشہ زمین پر

    بدلے ہوئے سے لگتے ہیں اب موسموں کے رنگ

    پڑتا ہے آسمان کا سایا زمین پر

    گوشہ ذرا سا کوئی اماں کا کہیں ملے

    جی تنگ ہو گیا ہے کشادہ زمین پر

    ہر ایک موج رک سی گئی سانس کی طرح

    بہتا نہیں ہے اب کہیں دریا زمین پر

    وہ جن کو میرے گھر کا نشاں بھی نہیں ملا

    حیراں ہیں مجھ کو دیکھ کے زندہ زمین پر

    مأخذ :
    • کتاب : Waraq-e-saadah (Gazals) (Pg. 64)
    • Author : Hamdam Kashmiri
    • مطبع : Hamdam Kashmiri, Khan Mahel, Shrinagar (2012)
    • اشاعت : 2012

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY