نہ غیر ہی مجھے سمجھو نہ دوست ہی سمجھو

محشر عنایتی

نہ غیر ہی مجھے سمجھو نہ دوست ہی سمجھو

محشر عنایتی

MORE BYمحشر عنایتی

    نہ غیر ہی مجھے سمجھو نہ دوست ہی سمجھو

    مرے لیے یہ بہت ہے کہ آدمی سمجھو

    میں رہ رہا ہوں زمانے میں سائے کی صورت

    جہاں بھی جاؤ مجھے اپنے ساتھ ہی سمجھو

    ہر ایک بات زباں سے کہی نہیں جاتی

    جو چپکے بیٹھے ہیں کچھ ان کی بات بھی سمجھو

    گزر تو سکتی ہیں راتیں جلا جلا کے چراغ

    مگر یہ کیا کہ اندھیرے کو روشنی سمجھو

    وہ شعر کہنے لگے ہو تم اب تو اے محشرؔ

    نہ کوئی اور ہی سمجھے نہ آپ ہی سمجھو

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نہ غیر ہی مجھے سمجھو نہ دوست ہی سمجھو نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY