نہ مرا زور نہ بس اب کیا ہے

غلام مرتضی راہی

نہ مرا زور نہ بس اب کیا ہے

غلام مرتضی راہی

MORE BYغلام مرتضی راہی

    نہ مرا زور نہ بس اب کیا ہے

    اے گرفتار نفس اب کیا ہے

    میں ترے واسطے آئینہ تھا

    اپنی صورت کو ترس اب کیا ہے

    دانے دانے پہ اتر آئے پرند

    بندۂ دام ہوس اب کیا ہے

    کس ہوا میں ہے تو اے ابر کرم

    اب برس یا نہ برس اب کیا ہے

    رہا جب تک رہا سمتوں کا زوال

    آئی آواز جرس اب کیا ہے

    مأخذ :
    • کتاب : Kulliyat-e-Rahi (Pg. 230)
    • Author : Ghulam Murtaza Rahi
    • مطبع : Educational Publishing House (2012)
    • اشاعت : 2012

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY