پئے گل گشت سنا ہے کہ وہ آج آتے ہیں

لالہ مادھو رام جوہر

پئے گل گشت سنا ہے کہ وہ آج آتے ہیں

لالہ مادھو رام جوہر

MORE BY لالہ مادھو رام جوہر

    پئے گل گشت سنا ہے کہ وہ آج آتے ہیں

    پھولوں کی بھی یہ خوشی ہے کہ کھلے جاتے ہیں

    بہر تسکین دل احباب یہ فرماتے ہیں

    آپ کہیے تو ابھی جا کے بلا لاتے ہیں

    گدگدی کر کے ہنساتے ہیں جو غش میں احباب

    کس کے رومال سے تلوے مرے سہلاتے ہیں

    آپ کے ہوتے کسی اور کو چاہوں توبہ

    کس طرف دھیان ہے کیا آپ یہ فرماتے ہیں

    میری ہی جان کے دشمن ہیں نصیحت والے

    مجھ کو سمجھاتے ہیں ان کو نہیں سمجھاتے ہیں

    بلبلو باغ میں غافل نہ کہیں ہو جانا

    ہر طرف گھات میں صیاد نظر آتے ہیں

    خوب پہچان لیا ہم نے تمہیں دل دے کر

    سچ کہا ہے کہ جو کھوتے ہیں وہی پاتے ہیں

    مجھ کو باور نہیں سچ سچ یہ بتا دے ہم دم

    تو نے کس سے یہ سنا ہے کہ وہ آج آتے ہیں

    کیا دل و دیدہ بھی ہرکارے ہیں سبحان اللہ

    لاکھ پردوں میں کوئی ہو یہ خبر لاتے ہیں

    دیکھ اچھا نہیں جوہرؔ کہیں مائل ہونا

    جب بھی سمجھاتے تھے اب بھی تجھے سمجھاتے ہیں

    مآخذ:

    • کتاب : Intekhab Kalam Lala M.R Jauhar (Pg. 39)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY