پتا اب تک نہیں بدلا ہمارا

احمد مشتاق

پتا اب تک نہیں بدلا ہمارا

احمد مشتاق

MORE BYاحمد مشتاق

    پتا اب تک نہیں بدلا ہمارا

    وہی گھر ہے وہی قصہ ہمارا

    وہی ٹوٹی ہوئی کشتی ہے اپنی

    وہی ٹھہرا ہوا دریا ہمارا

    یہ مقتل بھی ہے اور کنج اماں بھی

    یہ دل یہ بے نشاں کمرہ ہمارا

    کسی جانب نہیں کھلتے دریچے

    کہیں جاتا نہیں رستہ ہمارا

    ہم اپنی دھوپ میں بیٹھے ہیں مشتاقؔ

    ہمارے ساتھ ہے سایا ہمارا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    پتا اب تک نہیں بدلا ہمارا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY