پھول نے ٹہنی سے اڑنے کی کوشش کی

گلزار

پھول نے ٹہنی سے اڑنے کی کوشش کی

گلزار

MORE BY گلزار

    پھول نے ٹہنی سے اڑنے کی کوشش کی

    اک طائر کا دل رکھنے کی کوشش کی

    کل پھر چاند کا خنجر گھونپ کے سینے میں

    رات نے میری جاں لینے کی کوشش کی

    کوئی نہ کوئی رہبر رستہ کاٹ گیا

    جب بھی اپنی رہ چلنے کی کوشش کی

    کتنی لمبی خاموشی سے گزرا ہوں

    ان سے کتنا کچھ کہنے کی کوشش کی

    ایک ہی خواب نے ساری رات جگایا ہے

    میں نے ہر کروٹ سونے کی کوشش کی

    ایک ستارہ جلدی جلدی ڈوب گیا

    میں نے جب تارے گننے کی کوشش کی

    نام مرا تھا اور پتہ اپنے گھر کا

    اس نے مجھ کو خط لکھنے کی کوشش کی

    ایک دھوئیں کا مرغولہ سا نکلا ہے

    مٹی میں جب دل بونے کی کوشش کی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY