پوشیدہ کیوں ہے طور پہ جلوہ دکھا کے دیکھ

اسعد بدایونی

پوشیدہ کیوں ہے طور پہ جلوہ دکھا کے دیکھ

اسعد بدایونی

MORE BY اسعد بدایونی

    پوشیدہ کیوں ہے طور پہ جلوہ دکھا کے دیکھ

    اے دوست میری تاب نظر آزما کے دیکھ

    پھولوں کی تازگی ہی نہیں دیکھنے کی چیز

    کانٹوں کی سمت بھی تو نگاہیں اٹھا کے دیکھ

    لیتا نہیں کسی کا پس مرگ کوئی نام

    دنیا کو دیکھنا ہے تو دنیا سے جا کے دیکھ

    دل میں ہمارے درد زمانے کا ہے نہاں

    پیوست دل میں سیکڑوں پیکاں جفا کے دیکھ

    جو بادہ خوار غم ہیں انہیں بھی کبھی کبھی

    ساقی شراب حسن کے ساغر پلا کے دیکھ

    بن جائے گا کبھی نہ کبھی درد ہی دوا

    اسعدؔ کے دل میں درد کی شدت بڑھا کے دیکھ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY