رابطہ لاکھ سہی قافلہ سالار کے ساتھ

قتیل شفائی

رابطہ لاکھ سہی قافلہ سالار کے ساتھ

قتیل شفائی

MORE BY قتیل شفائی

    رابطہ لاکھ سہی قافلہ سالار کے ساتھ

    ہم کو چلنا ہے مگر وقت کی رفتار کے ساتھ

    غم لگے رہتے ہیں ہر آن خوشی کے پیچھے

    دشمنی دھوپ کی ہے سایۂ دیوار کے ساتھ

    کس طرح اپنی محبت کی میں تکمیل کروں

    غم ہستی بھی تو شامل ہے غم یار کے ساتھ

    لفظ چنتا ہوں تو مفہوم بدل جاتا ہے

    اک نہ اک خوف بھی ہے جرأت اظہار کے ساتھ

    دشمنی مجھ سے کئے جا مگر اپنا بن کر

    جان لے لے مری صیاد مگر پیار کے ساتھ

    دو گھڑی آؤ مل آئیں کسی غالبؔ سے قتیلؔ

    حضرت ذوقؔ تو وابستہ ہیں دربار کے ساتھ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY