رات پڑے گھر جانا ہے

محمد علوی

رات پڑے گھر جانا ہے

محمد علوی

MORE BYمحمد علوی

    رات پڑے گھر جانا ہے

    صبح تلک مر جانا ہے

    جاگ کے پچھتانا ہے بہت

    سوتے میں ڈر جانا ہے

    جانے سے پہلے ہم نے

    شور بہت کر جانا ہے

    سارے خون خرابے کو

    آنکھوں میں بھر جانا ہے

    اندھوں نے بلوایا ہے

    بھیس بدل کر جانا ہے

    چھ نظمیں جرمانہ تھا

    ایک غزل ہرجانہ ہے

    لڑکی اچھی ہے علویؔ

    نام اس کا مرجانہ ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY