راز عشق اظہار کے قابل نہیں

جلیل مانک پوری

راز عشق اظہار کے قابل نہیں

جلیل مانک پوری

MORE BYجلیل مانک پوری

    راز عشق اظہار کے قابل نہیں

    جرم یہ اقرار کے قابل نہیں

    آنکھ پر خوں شق جگر دل داغ دار

    کوئی نذر یار کے قابل نہیں

    دید کے قابل حسیں تو ہیں بہت

    ہر نظر دیدار کے قابل نہیں

    دے رہے ہیں مے وہ اپنے ہاتھ سے

    اب یہ شے انکار کے قابل نہیں

    جان دینے کی اجازت دیجیے

    سر مرا سرکار کے قابل نہیں

    چھوڑ بھی گلشن کو اے نرگس کہیں

    یہ ہوا بیمار کے قابل نہیں

    شاعری کو طبع رنگیں چاہیئے

    ہر زمیں گل زار کے قابل نہیں

    خامشی میری یہ کہتی ہے جلیلؔ

    درد دل اظہار کے قابل نہیں

    مأخذ :
    • کتاب : Kainat-e-Jalil Manakpuri (Pg. 324)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY