ساغر اٹھا کے زہد کو رد ہم نے کر دیا

سراج الدین ظفر

ساغر اٹھا کے زہد کو رد ہم نے کر دیا

سراج الدین ظفر

MORE BY سراج الدین ظفر

    ساغر اٹھا کے زہد کو رد ہم نے کر دیا

    پھر زندگی کے جزر کو مد ہم نے کر دیا

    وقت اپنا زر خرید تھا ہنگام مے کشی

    لمحے کو طول دے کے ابد ہم نے کر دیا

    دل پند واعظاں سے ہوا ہے اثر پذیر

    اس کو خراب صحبت بد ہم نے کر دیا

    تسبیح سے سبو کو بدل کر خدا کو آج

    بالاتر از شمار و عدد ہم نے کر دیا

    بادہ تھا یا عروس فراست تھی جام میں

    جو کہہ دیا بہک کے سند ہم نے کر دیا

    مصرعوں میں گیسوؤں کی فصاحت کا بھر کے رنگ

    اپنی ہر اک غزل کو سند ہم نے کر دیا

    تشبیہ دے کے قامت جاناں کو سرو سے

    اونچا ہر ایک سرو کا قد ہم نے کر دیا

    ذریعہ:

    • Book: Ghazal Calendar-2015 (Pg. 19.06.2015)
    0
    COMMENT
    COMMENTS
    تبصرے دیکھیے

    Critique mode ON

    Tap on any word to submit a critique about that line. Word-meanings will not be available while you’re in this mode.

    OKAY

    SUBMIT CRITIQUE

    نام

    ای-میل

    تبصره

    Thanks, for your feedback

    Critique draft saved

    EDIT DISCARD

    CRITIQUE MODE ON

    TURN OFF

    Discard saved critique?

    CANCEL DISCARD

    CRITIQUE MODE ON - Click on a line of text to critique

    TURN OFF

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed form your favorites