سب آسان ہوا جاتا ہے

شارق کیفی

سب آسان ہوا جاتا ہے

شارق کیفی

MORE BY شارق کیفی

    سب آسان ہوا جاتا ہے

    مشکل وقت تو اب آیا ہے

    جس دن سے وہ جدا ہوا ہے

    میں نے جسم نہیں پہنا ہے

    کوئی دراڑ نہیں ہے شب میں

    پھر یہ اجالا سا کیسا ہے

    برسوں کا بچھڑا ہوا سایہ

    اب آہٹ لے کر لوٹا ہے

    اپنے آپ سے ڈرنے والا

    کس پہ بھروسہ کر سکتا ہے

    ایک محاذ پہ ہارے ہیں ہم

    یہ رشتہ کیا کم رشتہ ہے

    قرب کا لمحہ تو یاروں کو

    چپ کرنے میں گزر جاتا ہے

    سورج سے شرطیں رکھتا ہوں

    گھر میں چراغ نہیں جلتا ہے

    دکھ کی بات تو یہ ہے شارقؔ

    اس کا وہم بھی سچ نکلا ہے

    مآخذ:

    • Book : Yahan Tak Roshni Aati Kahan Thi (Pg. 91)
    • Author : Shariq Kaifi
    • مطبع : Educational Publishing House (2008)
    • اشاعت : 2008

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY