صبر آتا ہے جدائی میں نہ خواب آتا ہے

بیخود دہلوی

صبر آتا ہے جدائی میں نہ خواب آتا ہے

بیخود دہلوی

MORE BYبیخود دہلوی

    صبر آتا ہے جدائی میں نہ خواب آتا ہے

    رات آتی ہے الٰہی کہ عذاب آتا ہے

    بے قراری دل بے تاب کی خالی تو نہیں

    یا وہ خود آتے ہیں یا خط کا جواب آتا ہے

    منہ میں واعظ کے بھی بھر آتا ہے پانی اکثر

    جب کبھی تذکرۂ جام شراب آتا ہے

    کس قیامت کی یہ آمد ہے خدا خیر کرے

    فتنۂ حشر بھی ہمراہ رکاب آتا ہے

    رند مشرب کوئی بیخودؔ سا نہ ہوگا واللہ

    پی کے مسجد ہی میں یہ خانہ خراب آتا ہے

    مآخذ
    • کتاب : Intekhab-e-Sukhan(Jild-2) (Pg. 175)
    • Author : Hasrat Mohani
    • مطبع : ttar pradesh urdu academy (1983)
    • اشاعت : 1983

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY