صحرا کو دریا سمجھا تھا

خالد معین

صحرا کو دریا سمجھا تھا

خالد معین

MORE BYخالد معین

    صحرا کو دریا سمجھا تھا

    میں بھی تجھ کو کیا سمجھا تھا

    ہاتھ چھڑا کر جانے والے

    میں تجھ کو اپنا سمجھا تھا

    پھر جاؤں گا اپنی زباں سے

    کیا مجھ کو ایسا سمجھا تھا

    اتنی آنکھ تو مجھ میں بھی تھی

    دنیا کو دنیا سمجھا تھا

    میں نے تجھ کو منزل جانا

    تو مجھ کو رستہ سمجھا تھا

    بے آئینہ شہر نے مجھ کو

    خود سا بے چہرا سمجھا تھا

    کیا سے کیا نکلا ہے، تو بھی

    میں تجھ کو کیسا سمجھا تھا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY