سر سے پا تک وہ گلابوں کا شجر لگتا ہے

بشیر بدر

سر سے پا تک وہ گلابوں کا شجر لگتا ہے

بشیر بدر

MORE BY بشیر بدر

    سر سے پا تک وہ گلابوں کا شجر لگتا ہے

    با وضو ہو کے بھی چھوتے ہوئے ڈر لگتا ہے

    میں ترے ساتھ ستاروں سے گزر سکتا ہوں

    کتنا آسان محبت کا سفر لگتا ہے

    مجھ میں رہتا ہے کوئی دشمن جانی میرا

    خود سے تنہائی میں ملتے ہوئے ڈر لگتا ہے

    بت بھی رکھے ہیں نمازیں بھی ادا ہوتی ہیں

    دل میرا دل نہیں اللہ کا گھر لگتا ہے

    زندگی تو نے مجھے قبر سے کم دی ہے زمیں

    پاؤں پھیلاؤں تو دیوار میں سر لگتا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY