سردی میں دن سرد ملا

محمد علوی

سردی میں دن سرد ملا

محمد علوی

MORE BYمحمد علوی

    سردی میں دن سرد ملا

    ہر موسم بے درد ملا

    اونچے لمبے پیڑوں کا

    پتہ پتہ زرد ملا

    سوچتے ہیں کیوں زندہ ہیں

    اچھا یہ سر درد ملا

    ہم روئے تو بات بھی تھی

    کیوں روتا ہر فرد ملا

    ملا ہمیں بس ایک خدا

    اور وہ بھی بے درد ملا

    علویؔ خواہش بھی تھی بانجھ

    جذبہ بھی نا مرد ملا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY