صوت کیا شے ہے خامشی کیا ہے

فرحت شہزاد

صوت کیا شے ہے خامشی کیا ہے

فرحت شہزاد

MORE BYفرحت شہزاد

    صوت کیا شے ہے خامشی کیا ہے

    غم کسے کہتے ہیں خوشی کیا ہے

    آج ہوں کل یہاں نہیں ہوں گا

    مجھ سے جاناں یہ بے رخی کیا ہے

    دیس پردیس ہو گیا اب تو

    آشنا کون اجنبی کیا ہے

    زندگی تیرے وصل کی خواہش

    مل گیا تو تو زندگی کیا ہے

    اور گر تو بچھڑ گیا مجھ سے

    پھر مری جان موت بھی کیا ہے

    ایک پل بھی سکوں نہیں ملتا

    تجھ سے مل کر یہ بے کلی کیا ہے

    طرز موسم پہ بات چل نکلی

    ورنہ ماضی کا ذکر ہی کیا ہے

    دوستی جو نبھا نہیں سکتے

    ان سے شہزادؔ دشمنی کیا ہے

    مآخذ:

    • کتاب : Aaina Jhuta hai (Pg. 119)
    • Author : Farhat Shahzad
    • مطبع : Al-hamd Publication (1997)
    • اشاعت : 1997

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY