شام سے پہلے تری شام نہ ہونے دوں گا

صابر ظفر

شام سے پہلے تری شام نہ ہونے دوں گا

صابر ظفر

MORE BYصابر ظفر

    شام سے پہلے تری شام نہ ہونے دوں گا

    زندگی میں تجھے ناکام نہ ہونے دوں گا

    اڑتے اڑتے ہی بکھر جائیں پر و بال اے کاش

    طائر جاں کو تہہ دام نہ ہونے دوں گا

    بے وفا لوگوں میں رہنا تری قسمت ہی سہی

    ان میں شامل میں ترا نام نہ ہونے دوں گا

    کل بھی چاہا تھا تجھے آج بھی چاہا ہے کہ ہے

    یہ خیال ایسا جسے خام نہ ہونے دوں گا

    لگنے دوں گا نہ ہوا تجھ کو خزاں کی میں ظفرؔ

    پھول جیسا ترا انجام نہ ہونے دوں گا

    مآخذ :
    • کتاب : Mazhab e Ishq (Pg. 354)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY