شبنم کے آنسو پھول پر یہ تو وہی قصہ ہوا

بشیر بدر

شبنم کے آنسو پھول پر یہ تو وہی قصہ ہوا

بشیر بدر

MORE BY بشیر بدر

    شبنم کے آنسو پھول پر یہ تو وہی قصہ ہوا

    آنکھیں مری بھیگی ہوئی چہرہ ترا اترا ہوا

    اب ان دنوں میری غزل خوشبو کی اک تصویر ہے

    ہر لفظ غنچے کی طرح کھل کر ترا چہرہ ہوا

    شاید اسے بھی لے گئے اچھے دنوں کے قافلے

    اس باغ میں اک پھول تھا تیری طرح ہنستا ہوا

    ہر چیز ہے بازار میں اس ہاتھ دے اس ہاتھ لے

    عزت گئی شہرت ملی رسوا ہوئے چرچا ہوا

    مندر گئے مسجد گئے پیروں فقیروں سے ملے

    اک اس کو پانے کے لئے کیا کیا کیا کیا کیا ہوا

    انمول موتی پیار کے دنیا چرا کر لے گئی

    دل کی حویلی کا کوئی دروازہ تھا ٹوٹا ہوا

    برسات میں دیوار و در کی ساری تحریریں مٹیں

    دھویا بہت مٹتا نہیں تقدیر کا لکھا ہوا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    طلعت عزیز

    طلعت عزیز

    مآخذ:

    • کتاب : Aamad (Pg. 95)
    • Author : Bashir Badar
    • مطبع : M.R. Publications (2009)
    • اشاعت : 2009

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY