شریفے کے درختوں میں چھپا گھر دیکھ لیتا ہوں

محمد علوی

شریفے کے درختوں میں چھپا گھر دیکھ لیتا ہوں

محمد علوی

MORE BYمحمد علوی

    شریفے کے درختوں میں چھپا گھر دیکھ لیتا ہوں

    میں آنکھیں بند کر کے گھر کے اندر دیکھ لیتا ہوں

    ادھر اس پار کیا ہے یہ کبھی سوچا نہیں میں نے

    مگر میں روز کھڑکی سے سمندر دیکھ لیتا ہوں

    سڑک پہ چلتے پھرتے دوڑتے لوگوں سے اکتا کر

    کسی چھت پر مزے میں بیٹھے بندر دیکھ لیتا ہوں

    یہ سچ ہے اپنی قسمت کوئی کیسے دیکھ سکتا ہے

    مگر میں تاش کے پتے اٹھا کر دیکھ لیتا ہوں

    گلی کوچوں میں چوراہوں پہ یا بس کی قطاروں میں

    میں اس چپ چاپ سی لڑکی کو اکثر دیکھ لیتا ہوں

    چلا جاؤں گا جیسے خود کو تنہا چھوڑ کر علویؔ

    میں اپنے آپ کو راتوں میں اٹھ کر دیکھ لیتا ہوں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    محمد علوی

    محمد علوی

    RECITATIONS

    محمد علوی

    محمد علوی

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    محمد علوی

    شریفے کے درختوں میں چھپا گھر دیکھ لیتا ہوں محمد علوی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY