دل کو درون خانہ ہی بہلاؤ گھر رہو

رحمان فارس

دل کو درون خانہ ہی بہلاؤ گھر رہو

رحمان فارس

MORE BYرحمان فارس

    دل کو درون خانہ ہی بہلاؤ گھر رہو

    تم کو قسم ہے بھیڑ میں مت جاؤ گھر رہو

    زندہ رہے تو یار بہت محفلیں بہت

    فی الحال میرے انجمن آراؤ! گھر رہو

    مانا کہ عید ملنا بھی دستور ہے مگر

    سینوں سے لگ کے موت نہ پھیلاؤ گھر رہو

    چوکھٹ نہ پار کرنا کہ باہر ہے قتل عام

    گلیوں میں چل رہی ہے اجل داؤ گھر رہو

    محبوب کو بھی لے کے مرو گے تم اپنے ساتھ

    گر عشق ہے تو عشق نہ جتلاؤ گھر رہو

    دریائے خوں ہے قریہ و بازار میں رواں

    تہہ کر کے رکھ دو یارو ابھی ناؤ گھر رہو

    اک مفتئ سخی کا ہے فتویٰ کہ ٹھیک ہے

    گھر رہ کے چاہے مے ہی پئے جاؤ گھر رہو

    فارس! ہمیں بھی شوق ملاقات ہے مگر

    پورے کریں گے بعد میں سب چاؤ گھر رہو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے