سخن کے چاک میں پنہاں تمہاری چاہت ہے

ارشد عبد الحمید

سخن کے چاک میں پنہاں تمہاری چاہت ہے

ارشد عبد الحمید

MORE BY ارشد عبد الحمید

    سخن کے چاک میں پنہاں تمہاری چاہت ہے

    وگرنہ کوزہ گری کی کسے ضرورت ہے

    زمیں کے پاس کسی درد کا علاج نہیں

    زمین ہے کہ مرے عہد کی سیاست ہے

    یہ انتظار نہیں شمع ہے رفاقت کی

    اس انتظار سے تنہائی خوبصورت ہے

    میں کیسے وار دوں تجھ پر مرے ستارۂ شام

    یہ حرف خواب تو اک چاند کی امانت ہے

    میں خاک خواب پلک سے جھٹکنے والا تھا

    پتا چلا کہ یہی حاصل مسافت ہے

    یہ مستطیل سا خاکہ کہ جس کو گھر کہیے

    اسی کے دائرہ و در میں میری جنت ہے

    یہ خوشہ چینی خوان انیسؔ ہے ارشدؔ

    نمک نمط جو مرے شعر میں فصاحت ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY