سوکھی زمیں کو یاد کے بادل بھگو گئے

ظہیر احمد ظہیر

سوکھی زمیں کو یاد کے بادل بھگو گئے

ظہیر احمد ظہیر

MORE BYظہیر احمد ظہیر

    سوکھی زمیں کو یاد کے بادل بھگو گئے

    پلکوں کو آج بیتے ہوئے پل بھگو گئے

    آنسو فلک کی آنکھ سے ٹپکے تمام رات

    اور صبح تک زمین کا آنچل بھگو گئے

    ماضی کے ابر ٹوٹ کے برسے کچھ اس طرح

    مدت سے خشک آنکھوں کے جنگل بھگو گئے

    وقت سفر جدائی کے لمحات مضمحل

    اک بے وفا کی آنکھ کا کاجل بھگو گئے

    میں منظروں میں کھویا ہوا پربتوں کے تھا

    آ کر کسی کی یاد کے بادل بھگو گئے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY