تجدید روایات کہن کرتے رہیں گے

ابو المجاہد زاہد

تجدید روایات کہن کرتے رہیں گے

ابو المجاہد زاہد

MORE BYابو المجاہد زاہد

    تجدید روایات کہن کرتے رہیں گے

    سر معرکۂ دار و رسن کرتے رہیں گے

    وہ دور خزاں ہو کہ بہاروں کا زمانہ

    ہم یاد تجھے جان چمن کرتے رہیں گے

    رنگین ترے ذکر سے ہم شعر و سخن کو

    اے جان سخن مرکز فن کرتے رہیں گے

    اس آبلہ پائی پہ بھی ہم تیری طلب میں

    طے جادۂ آلام و محن کرتے رہیں گے

    دنیا ہمیں دیوانہ سمجھتی ہے تو سمجھے

    ہم عام غم دل کا چلن کرتے رہیں گے

    جلتے ہیں جسے سن کے اندھیرے کے پرستار

    ہم عام وہی طرز سخن کرتے رہیں گے

    گلشن میں نہ ہم ہوں گے تو پھر سوگ ہمارا

    گل پیرہن و غنچہ دہن کرتے رہیں گے

    زاہدؔ بہ تقاضائے وفا طرح یقین پر

    ہم کوشش تعمیر وطن کرتے رہیں گے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY