شام ہوئی ہے یار آئے ہیں یاروں کے ہم راہ چلیں

جون ایلیا

شام ہوئی ہے یار آئے ہیں یاروں کے ہم راہ چلیں

جون ایلیا

MORE BYجون ایلیا

    دلچسپ معلومات

    مطلع میں درگاہ "شاہ ولایت درگاہ" کی طرف اشارہ ہے جو امروہہ کی مشہور درگاہ ہے ۔ اس کے بارے میں مشہور ہے کہ یہاں پر بچھو بے ضرر ہو جاتا ہے ۔اس درگاہ پر جون ایلیا کے بچپن کا زمانہ گزرا ہے

    شام ہوئی ہے یار آئے ہیں یاروں کے ہم راہ چلیں

    آج وہاں قوالی ہوگی جونؔ چلو درگاہ چلیں

    اپنی گلیاں اپنے رمنے اپنے جنگل اپنی ہوا

    چلتے چلتے وجد میں آئیں راہوں میں بے راہ چلیں

    جانے بستی میں جنگل ہو یا جنگل میں بستی ہو

    ہے کیسی کچھ نا آگاہی آؤ چلو ناگاہ چلیں

    کوچ اپنا اس شہر طرف ہے نامی ہم جس شہر کے ہیں

    کپڑے پھاڑیں خاک بہ سر ہوں اور بہ عز و جاہ چلیں

    راہ میں اس کی چلنا ہے تو عیش کرا دیں قدموں کو

    چلتے جائیں چلتے جائیں یعنی خاطر خواہ چلیں

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    شام ہوئی ہے یار آئے ہیں یاروں کے ہم راہ چلیں نعمان شوق

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY