تیرا چہرہ کتنا سہانا لگتا ہے

کیف بھوپالی

تیرا چہرہ کتنا سہانا لگتا ہے

کیف بھوپالی

MORE BY کیف بھوپالی

    تیرا چہرہ کتنا سہانا لگتا ہے

    تیرے آگے چاند پرانا لگتا ہے

    ترچھے ترچھے تیر نظر کے لگتے ہیں

    سیدھا سیدھا دل پہ نشانا لگتا ہے

    آگ کا کیا ہے پل دو پل میں لگتی ہے

    بجھتے بجھتے ایک زمانا لگتا ہے

    پاؤں نا باندھا پنچھی کا پر باندھا

    آج کا بچہ کتنا سیانا لگتا ہے

    سچ تو یہ ہے پھول کا دل بھی چھلنی ہے

    ہنستا چہرہ ایک بہانا لگتا ہے

    سننے والے گھنٹوں سنتے رہتے ہیں

    میرا فسانہ سب کا فسانا لگتا ہے

    کیفؔ بتا کیا تیری غزل میں جادو ہے

    بچہ بچہ تیرا دوانا لگتا ہے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    جگجیت سنگھ

    جگجیت سنگھ

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    تیرا چہرہ کتنا سہانا لگتا ہے نعمان شوق

    Tagged Under

    Critique mode ON

    Tap on any word to submit a critique about that line. Word-meanings will not be available while you’re in this mode.

    OKAY

    SUBMIT CRITIQUE

    نام

    ای-میل

    تبصره

    Thanks, for your feedback

    Critique draft saved

    EDIT DISCARD

    CRITIQUE MODE ON

    TURN OFF

    Discard saved critique?

    CANCEL DISCARD

    CRITIQUE MODE ON - Click on a line of text to critique

    TURN OFF

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites