تیری یادیں ہیں جنہیں دل میں بسا رکھا ہے

عزیز الرحمن شہید فتح پوری

تیری یادیں ہیں جنہیں دل میں بسا رکھا ہے

عزیز الرحمن شہید فتح پوری

MORE BYعزیز الرحمن شہید فتح پوری

    تیری یادیں ہیں جنہیں دل میں بسا رکھا ہے

    ہم نے اس آگ کو سینے میں دبا رکھا ہے

    شہر ہو دشت تمنا ہو کہ دریا کا سفر

    تیری تصویر کو سینے سے لگا رکھا ہے

    یہ تو ممکن ہی نہیں حسن کا فیضان نہ ہو

    عشق نے حسن کو ارمان بنا رکھا ہے

    کیسا سورج ہے کہ دیتا نہیں ظلمت کو شکست

    کیوں اندھیروں نے اجالوں کو دبا رکھا ہے

    تشنگی اپنی مٹا لے کہ ہنسے گی دنیا

    پی تو لے ساغر تسلیم و رضا رکھا ہے

    حق کے لشکر میں سپاہی ہیں بہت تھوڑے سے

    ہم نے ہی حوصلہ باطل کا بڑھا رکھا ہے

    کب نکلنا ہے اسے یہ بھی بتا سکتی ہے

    ظلمت شب نے بھی سورج کا پتہ رکھا ہے

    خوگر ضبط ہیں رسوا نہ کریں گے تجھ کو

    ہم نے دنیا سے ترے غم کو چھپا رکھا ہے

    دل جو ٹوٹے ہیں انہیں جوڑ کے دکھلاؤ شہیدؔ

    ورنہ ان کشف و کرامات میں کیا رکھا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY