تھوڑا سا عکس چاند کے پیکر میں ڈال دے

کیف بھوپالی

تھوڑا سا عکس چاند کے پیکر میں ڈال دے

کیف بھوپالی

MORE BY کیف بھوپالی

    تھوڑا سا عکس چاند کے پیکر میں ڈال دے

    تو آ کے جان رات کے منظر میں ڈال دے

    جس دن مری جبیں کسی دہلیز پر جھکے

    اس دن خدا شگاف مرے سر میں ڈال دے

    اللہ تیرے ساتھ ہے ملاح کو نہ دیکھ

    یہ ٹوٹی پھوٹی ناؤ سمندر میں ڈال دے

    آ تیرے مال و زر کو میں تقدیس بخش دوں

    لا اپنا مال و زر مری ٹھوکر میں ڈال دے

    بھاگ ایسے رہنما سے جو لگتا ہے خضر سا

    جانے یہ کس جگہ تجھے چکر میں ڈال دے

    اس سے ترے مکان کا منظر ہے بد نما

    چنگاری میرے پھوس کے چھپر میں ڈال دے

    میں نے پناہ دی تجھے بارش کی رات میں

    تو جاتے جاتے آگ مرے گھر میں ڈال دے

    اے کیفؔ جاگتے تجھے پچھلا پہر ہوا

    اب لاش جیسے جسم کو بستر میں ڈال دے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    تھوڑا سا عکس چاند کے پیکر میں ڈال دے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY