تھوڑی سی دور تیری صدا لے گئی ہمیں

عرفان احمد

تھوڑی سی دور تیری صدا لے گئی ہمیں

عرفان احمد

MORE BY عرفان احمد

    تھوڑی سی دور تیری صدا لے گئی ہمیں

    پھر اک ہوائے تند اڑا لے گئی ہمیں

    ندی کنارے کیا گئے پانی کی چاہ میں

    ندی سمندروں میں بہا لے گئی ہمیں

    قسمت میں تشنگی سے ہی مرنا لکھا تھا پھر

    کیوں ساحلوں پہ گرم ہوا لے گئی ہمیں

    نشہ تھا زندگی کا شرابوں سے تیز تر

    ہم گر پڑے تو موت اٹھا لے گئی ہمیں

    ہم سادہ دل تھے آ گئے آخر فریب میں

    باتوں میں اس کی آنکھ لگا لے گئی ہمیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY