تجھ کو معلوم نہیں کیا ہے تری یادوں سے

امت شرما میت

تجھ کو معلوم نہیں کیا ہے تری یادوں سے

امت شرما میت

MORE BYامت شرما میت

    تجھ کو معلوم نہیں کیا ہے تری یادوں سے

    ایک انجان سا رشتہ ہے تری یادوں سے

    رات بے چین سی سردی میں ٹھٹھرتی ہے بہت

    دن بھی ہر روز سلگتا ہے تری یادوں سے

    ہجر کے غم نے مجھے مار دیا تھا تو کیا

    مر کے جینا بھی تو سیکھا ہے تری یادوں سے

    آج پھر سے جو ہوا قید تو یہ سوچوں ہوں

    کل ہی سوچا تھا کہ بچنا ہے تری یادوں سے

    ایسے شامل تھا میں تجھ میں کہ بڑی مشکل سے

    میں نے اب خود کو نکالا ہے تری یادوں سے

    کیا بتائیں کہ یہاں کیسے گزاری ہم نے

    اپنی ہر سانس کو سینچا ہے تری یادوں سے

    میتؔ یادوں نے بھی کتنا ہے ستایا مجھ کو

    مرا تکیہ بڑا بھیگا ہے تری یادوں سے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY