تجھ پہ جاں دینے کو تیار کوئی تو ہوگا

شہزاد احمد

تجھ پہ جاں دینے کو تیار کوئی تو ہوگا

شہزاد احمد

MORE BY شہزاد احمد

    تجھ پہ جاں دینے کو تیار کوئی تو ہوگا

    زندگی تیرا طلب گار کوئی تو ہوگا

    تختۂ دار پہ چاہے جسے لٹکا دیجے

    اتنے لوگوں میں گناہ گار کوئی تو ہوگا

    کوئی دیوانہ تو للکارے گا آتی رت کو

    واقعہ پھر سر بازار کوئی تو ہوگا

    کوئی تو رات کو دیکھے گا جواں ہوتے ہوئے

    اس بھرے شہر میں بے دار کوئی تو ہوگا

    دل کے اندر بھی تو موجود ہے دنیا کا ضمیر

    آپ سے بر سر پیکار کوئی تو ہوگا

    شام کو روز نہاتا ہے لہو میں سورج

    نہیں کھلتا مگر اسرار کوئی تو ہوگا

    میں یہی سوچ کے جنگل سے نکل آیا تھا

    شہر میں سایۂ دیوار کوئی تو ہوگا

    خشک مٹی سے بھی خوشبو تری آتی ہوگی

    مٹ چکا گھر مگر آثار کوئی تو ہوگا

    کیوں کھنچے جاتے ہیں روز اس کی طرف ہم شہزادؔ

    اس کی جانب سے بھی اصرار کوئی تو ہوگا

    مآخذ:

    • کتاب : Deewar pe dastak (Pg. 865)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY