تجھ سے وابستگی رہے گی ابھی

ابرار احمد

تجھ سے وابستگی رہے گی ابھی

ابرار احمد

MORE BY ابرار احمد

    تجھ سے وابستگی رہے گی ابھی

    دل کو یہ بیکلی رہے گی ابھی

    سر کو دیوار ہی نہیں ملتی

    سو یہ دیوانگی رہے گی ابھی

    کوئی دن فرصت تمنا ہے

    کوئی دن سر خوشی رہے گی ابھی

    کاسۂ عمر بھر چکا پھر بھی

    کہیں کوئی کمی رہے گی ابھی

    شب وہی ہے جمال خواب وہی

    آنکھ اپنی لگی رہے گی ابھی

    جس قیامت کی آمد آمد ہے

    وہ قیامت ٹلی رہے گی ابھی

    ہم یقیناً یہاں نہیں ہوں گے

    غالباً زندگی رہے گی ابھی

    کچھ ابھی رنج آرزو ہے ہمیں

    آنکھ میں کچھ نمی رہے گی ابھی

    تو ابھی مبتلائے دنیا نہیں

    تجھ میں یہ سادگی رہے گی ابھی

    لا تعلق ہوں اس تعلق سے

    اور یہ دوستی رہے گی ابھی

    جی اچٹتا نہیں ہے لگتا نہیں

    سو یہ بیگانگی رہے گی ابھی

    کہیں کوئی چراغ جلتا ہے

    کچھ نہ کچھ روشنی رہے گی ابھی

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    تجھ سے وابستگی رہے گی ابھی نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY