ٹک دیکھ لیں چمن کو چلو لالہ زار تک

میر حسن

ٹک دیکھ لیں چمن کو چلو لالہ زار تک

میر حسن

MORE BY میر حسن

    ٹک دیکھ لیں چمن کو چلو لالہ زار تک

    کیا جانے پھر جئیں نہ جئیں ہم بہار تک

    قسمت نے دور ایسا ہی پھینکا ہمیں کہ ہم

    پھر جیتے جی پہنچ نہ سکے اپنے یار تک

    لے جاؤں اب میں یاں سے کہاں اپنا آشیاں

    دشمن ہے اس چمن میں مرا خار خار تک

    دست ستم دراز کیا جب جنون نے

    چھوڑا نہ میرے پاس گریباں کا تار تک

    پھر بھی ٹک اتنا اس کو تو کہہ دیجیو صبا

    جاوے اگر ہمارے تغافل شعار تک

    جینے کی صورت اس کی ٹھہرتی ہے کوئی دم

    اس وقت میں بھی پہنچو جو اس بیقرار تک

    کہہ اس زمیں میں ایک غزل اور بھی حسنؔ

    ہے تیری طبع کہنے پر اب تو ہزار تک

    مآخذ:

    Deewan-e-Meer Hasan
    • Deewan-e-Meer Hasan
    Deewan-e-Meer Hasan
    • Deewan-e-Meer Hasan

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY