تم عزیز اور تمہارا غم بھی عزیز (ردیف .. ی)

ہادی مچھلی شہری

تم عزیز اور تمہارا غم بھی عزیز (ردیف .. ی)

ہادی مچھلی شہری

MORE BYہادی مچھلی شہری

    تم عزیز اور تمہارا غم بھی عزیز

    کس سے کس کا گلا کرے کوئی

    مانع عرض مجھ کو پاس وفا

    ان کو ضد التجا کرے کوئی

    تم تغافل شعار دل مایوس

    آہ کیا حوصلہ کرے کوئی

    غم دل اب کسی کے بس کا نہیں

    کیا دوا کیا دعا کرے کوئی

    کون سنتا ہے غم نصیبوں کی

    کس کے در پر صدا کرے کوئی

    خیر سن لو مرا فسانۂ غم

    یہ تو کہہ دوگے کیا کرے کوئی

    سخت مشکل ہے شرح درد نہاں

    کس طرح ابتدا کرے کوئی

    جس کو دیکھو وہ ہے وفا دشمن

    کس سے عہد وفا کرے کوئی

    ختم جور و جفا ہے مرگ وفا

    کاش پھر ابتدا کرے کوئی

    لطف تعزیر جب ہو جان حیات

    کیوں نہ ہادیؔ خطا کرے کوئی

    مآخذ
    • کتاب : Jadeed Shora-e-Urdu (Pg. 527)
    • Author : Dr. Abdul Wahid
    • مطبع : Feroz sons Printers Publishers and Stationers

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY